خوش آمدیددعازبور

زبور 9 – عدل و اِنصاف کے لئے خدا کی شکرگزاری

زبور 9: ” میں اپنے پورے دِل سے خُداوند کی شکرگزاری کرونگا۔ میں تیرے سب عجیب کاموں کا بیان کرونگا۔ میں تجھ میں خوشی مناؤنگا اور مسرور ہونگا۔ اے حق تعالیٰ میں تیری ستایش کرونگا۔ جب میرے دشمن پیچھے ہٹتے ہیں تو تیری حضُوری کے سبب سے لغزش کھاتے اور ہلاک ہو جاتے ہیں۔ کیونکہ تُو نے میرے حق کی اور میرے معاملہ کی تائید کی ہے۔ تُو نے تخت پر بیٹھ کر صداقت سے اِنصاف کیا۔ تُو نے قوموں کو جھڑکا۔ تُو نے شریروں کو ہلاک کیا ہے۔ تُو نے اُنکا نام ابدالآباد کے لئے مِٹا ڈالا ہے۔ دشمن تمام ہوئے۔

وہ ہمیشہ کے لئے برباد ہوگئے اور جن شہروں کو تُو نے ڈھا دیا اُنکی یاد گار تک مِٹ گئی۔ لیکن خداوند ابد تک تخت نشین ہے۔ اُس نے انصاف کے لئے اپنا تخت تیار کیا ہے اور وہی صداقت سے جہان کی عدالت کریگا۔ وہ راستی سے قوموں کا اِنصاف کریگا۔ خُداوند مظلوموں کے لئے اُونچا بُرج ہوگا۔ مصیبت کے ایام میں اُونچا بُرج اور وہ جو تیرا نام جانتے ہیں تجھ پر توکل کرینگے کیونکہ اَے خُداوند! تُو نے اپنے طالبوں کو ترک نہیں کیا ہے۔

خُداوند کی ستایش کرو جو صیُّون میں رہتا ہے۔ لوگوں کے درمیان اُس کے کاموں کا بیان کرو کیونکہ خُون کی پُرسِش کرنے والا اُن کو یاد رکھتا ہے۔ وہ غریبوں کی فریاد کو نہیں بھولتا۔ اَے خُداوند مجھ پر رحم کر! تُو جو موت کے پھاٹکوں سے مجھے اُٹھاتا ہے۔ میرے اُس دُکھ کو دیکھ جو میرے نفرت کرنے والوں کی طرف سے ہے۔ تاکہ میں تیری کامل ستایش کا اظہار کروں۔ صیُّون کی بیٹی کے پھاٹکوں پر میں تیری نجات سے شادمان ہونگا۔ قومیں خُود اُس گڑھے میں گِری ہیں جسے اُنہوں نے کھودا تھا۔ جو جال اُنہوں نے لگایا تھا اُس میں اُن ہی کا پاؤں پھنسا۔

خُداوند کی شہرت پھیل گئی۔ اُس نے اِنصاف کیا ہے۔ شریر اپنے ہی ہاتھ کے کاموں میں پھنس گیا ہے۔ شریر پاتال میں جائینگے۔ یعنی وہ سب قومیں جو خُدا کو بھول جاتی ہیں۔ کیونکہ مسکین سدا بُھولے بسرے نہ رہینگے۔ نہ غریبوں کی اُمید ہمیشہ کے لئے ٹوٹیگی۔ اُٹھ اَے خُداوند! اِنسان غالب نہ ہونے پائے۔ قوموں کی عدالت تیرے حضور ہو۔ اَے خُداوند! اُنکو خوف دِلا۔ قومیں اپنے آپ کو بشر ہی جانیں”۔ آمین!


ShareShare on FacebookTweet about this on TwitterShare on Google+Email this to someone
Previous post

زبور 8 - خدا کی تمجید اور انسان کا وقار

Next post

زبور 10 - عدل و انصاف کے لئے فریاد

No Comment

Leave a reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Time limit is exhausted. Please reload CAPTCHA.