سابق مسلمانوں کی گواہیماریہویڈیوز

قرآن اور بائبل کے بیچ فرق – ایک سابق مسلمان کی نظر سے

مسلمانوں کا دعوی ہے کہ قرآن مجید اللہ کی طرف سے بھیجا گیا آخری اور واحد حقیقی کلام ہے. اس کے برعکس عیسائی مانتے ہیں کہ بائبل ہی وہ سچی کتاب ہے جس میں خدا کا اصلی کلام پایا جاتا ہے. آج ایک پاکستانی سابق مسلمان جنہوں نے اسلام چھوڑ کر مسیحیت کو اپنایا، ہمیں بتائیں گی کہ انہوں نے قرآن اور بائبل کے درمیان کیا فرق پایا. یہ ویڈیو ہمیں سمجھنے میں مدد کرے گی کہ کس طرح ایک مسلمان کو بائبل میں وہ امن اور اطمینان ملتا ہے جو اسے قرآن میں کبھی نہیں ملتا۔

اس بہادر لڑکی کی تعریف کی جانی چاہئے کہ وہ قرآن کے بارے میں ہم سے اپنی رائے اشتراک کر رہی ہے کیونکہ بہت سے لوگ حقیقت سے واقف ہونے کے باوجود جھوٹ کو بے نقاب کرنے اور عوامی سطح پر حقیقت کی حمایت کرنے سے ڈرتے ہیں لیکن پاکستان کی اس نوجوان سابق مسلمان خاتون نے یسوع کی محبت اور مسلمانوں کو یسوع کی خوشخبری سنانے کے جنون کے لئے اپنا سب کچھ داؤ پر لگا دیا. آج وہ ہمیں بتائیں گی کہ کیوں قرآن کو ایک حقیقی مذہب کا ذریعہ نہیں سمجھا جانا چاہئے اور کیوں بائبل کو واحد سچی مذہبی کتاب، خدا کا سچا پیغام، مقدس زندگی جینے کی سیکھ اور ابدی زندگی کا حصہ بننے کا ذریعہ سمجھا جانا چاہئے. ہم دعا کرتے ہیں کہ خدا پوری مسلم دنیا کی آنکھیں کھولے اور انہیں اپنے سہی راستے پر چلنا سکھائے. اور روح القدس مسلمانوں کی رہنمائی کرے تاکہ وہ سہی وقت پر سہی فیصلہ لے سکیں. آمین!


ShareShare on FacebookTweet about this on TwitterShare on Google+Email this to someone
Previous post

میری بہن نے مجھے چھوڈ دیا لیکن یسوع نے مجھے گلے لگایا - ایک سابق مسلمان کی گواہی

Next post

یسوع مسیح مسلمانوں کے لئے تنظیم بینکاک، تھائی لینڈ میں بائبل اسکول شروع کرنے جا رہی ہے

2 Comments

  1. aultaaf
    4 May, 2018 at 4:50 am — Reply

    Deu 14:8 And the swine, because it divideth the hoof, yet cheweth not the cud, it [is] unclean unto you: ye shall not eat of their flesh, nor touch their dead carcase.
    محترم جب بائبل نے سور کو حرام قرار دیا ہے تو آپ لوگ کیوں کھاتے ہو

  2. aultaaf
    4 May, 2018 at 5:04 am — Reply

    حضرت مسیح ؑ کی ڈاڑھی تھی تو کیا وجہ ہے پوپ تک کے مذھبی رہنماﺅں کی داڑھی نہیں ۔
    نن کے حجاب کی عزت کی جاتی اور مسلم عورت کے حجاب کا مذاق کیوں ؟

Leave a reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Time limit is exhausted. Please reload CAPTCHA.